2018 December 16
شام میں عام شہریوں پر امریکی بمباریاں اور غیروں سمیت بعض مسلم میڈیا کی جانب سے کفار کی خاموش حمایت
مندرجات: ١٦٥٧ تاریخ اشاعت: ١٤ July ٢٠١٨ - ١٧:٤٤ مشاہدات: 72
خبریں » پبلک
شام میں عام شہریوں پر امریکی بمباریاں اور غیروں سمیت بعض مسلم میڈیا کی جانب سے کفار کی خاموش حمایت

اگرچہ امریکی اتحادی مختلف مسلمان ممالک میں مسلمانوں کا خون بہانے میں لمحہ بھر تاخیر نہیں کرتے تاہم اس کے باوجود بعض مسلمان ممالک شام، عراق، یمن سمیت دیگر ممالک میں امریکی جارحیت کی خاموشی سے اخلاقی اور سیاسی حمایت کررہے ہیں۔

شام میں امریکی اتحاد کی فضائی بمباری کے نتیجے میں خواتین اور بچوں سمیت 54 افراد جاں بحق اور درجنوں زخمی ہوگئے ہیں۔

شامی خانہ جنگی پر گہری نظر رکھنے والی این جی او سیرین آبزرویٹری کے مطابق امریکی اتحادی طیاروں نے داعش کے خلاف کارروائی کے بہانے عراقی سرحد کے قریبی علاقے السوسہ میں عام شہریوں پر بمباری کی  ہے۔

لڑاکا طیاروں نے برف بنانے والی ایک فیکٹری اور اس کے اطراف میں بم برسائے جس سے 54 افراد لقمہ اجل بن گئے، مرنے والوں میں 30 داعش کے جنگجو اور 24 عام شہری ہیں۔

امریکی اتحاد نے ایک تحریری بیان میں بمباری کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ امریکا اور اتحادی طیاروں نے عراقی سرحد کے قریب کارروائی کی ہے جس میں عام شہریوں کی ہلاکت کی تحقیقات شروع کردی گئی ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ شہریوں کی ہلاکت کے حوالے سے تمام شواہد اکٹھے کرکے ابتدائی رپورٹس سویلین سیل کو بھیج دی گئی ہیں جو تمام تر پہلوؤں کا جائزہ لے کر انکوائری رپورٹ تیار کرے گی۔

واضح رہے کہ امریکہ اور اس کے عربی و غربی اتحادیوں کا مقصد صرف اور صرف مسلمانوں کا خون بہانا ہے اور اس کون بہانے کے پیچھے کفار کا اصل مقصد بعض مسلمان اتحادی ممالک کو اسلحہ بیچ کر انہی کے ہاتھوں مسلمان بھائیوں کا قتل عام کرنا ہے تاکہ وہ عالم اسلام پر اپنی بالادستی قائم کر سکیں تاہم ایران، حزب اللہ لبنان، انصار اللہ یمن اور عراق کی عوامی رضاکار تنظیم حشدالشعبی کی کوششوں سے کفار اور بعض نام نہاد مسلمان حکمرانوں کے خواب چکناچور ہوگئے ہیں۔




Share
* نام:
* ایمیل:
* رائے کا متن :
* سیکورٹی کوڈ:
  

آخری مندرجات
زیادہ زیر بحث والی
زیادہ مشاہدات والی