2018 September 23
چھاتی کا دودھ پلا کر عورت آفس میں نامحرم کے ساتھ کام کرسکتی ہے،وہابی مفتی
مندرجات: ٤٤٨ تاریخ اشاعت: ٠٨ December ٢٠١٦ - ١٤:٠٣ مشاہدات: 428
خبریں » پبلک
چھاتی کا دودھ پلا کر عورت آفس میں نامحرم کے ساتھ کام کرسکتی ہے،وہابی مفتی

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) وہابیت کی فتویٰ فیکٹری کی جانب سے ایک اور نیا فتویٰ سامنے آیا ہے جس نے اسلام کے قوانین کی دھجیاں بکھردیں ہیں۔ سعودی مفتیٰ ڈاکڑ عزت عطیہ کا کہنا ہے کہ اگر کسی عورت کو نامحرم کے ساتھ آفس میں کام کرنے میں مسئلہ پیدا ہورہا تو وہ عورت اپنے چھاتی سے اس مرد کو پانچ بار دودھ پلا دے تو وہ محرم ہوجائے گا اور پھر اسکے ساتھ کام کرنے میں کوئی مسئلہ نہیں، ڈاکڑ عزت عطیہ جو سعودی عرب کے نامور مفتی ہیں اور ساتھ ہی الزھر یونیورسٹی میں شعبہ حدیث کے سربراہ بھی ہیں نے یہ فتوئ گذشتہ سالوں میں دیا تھا، ایک بار پھر یہ فتویٰ شائع کرنے کا مقصد قارئیں کو ان وہابیت کے کارناموں سے آگا ہ کرنا ہے کہ کس طرح یہ مفتی اسلام کے بنیادی قوانین میں رد و بدل کرکے اسلام ناب محمد ی (ص) کی بدنامی کا سبب بن رہے ہیں۔

اس وبابی مفتی کا کہنا تھا کہ آفس میں اگر خاتوں کو کسی نامحرم کے ساتھ جنسی تعلقات کی خواہش جاگ رہی ہو تو اپنا چھاتی کا دودھ نامحرم کو پیلا دے ،وہ مرد اسکے لئے محرم ہوجائے گا اور پھر اسکے ساتھ جنسی تعلقات حرام ہونگے۔

مفتی صاحب نے تاہم اس بارے میں نہیں بتایا کہ اگر آفس میں دس سے زائد مرد ہیں تو کیا وہ بچاری عورت ہر مرد کو اپنے چھاتی کا دودھ پلا کر محرم بناتی پھرے گی  ؟

یہ بلکل عقل کے منافی فتویٰ ہے، جبکہ اسلام نے شرعی حدودد اور پردے میں رہتے ہوئے عورت کو اجازت دی ہے کہ وہ کام کرے، لیکن چونکہ ان وہابی مفتیوں پر جنسی شہوت اس قدر حاوی ہے کہ ان کی بات ان معمالات سے شروع ہوکر اسی پر اختتام ہوتی ہے، کیونکہ ان وہابی عرب بدو ں کے ذہن صرف شہوت پرستی کے گرد گھومتے ہیں۔





Share
* نام:
* ایمیل:
* رائے کا متن :
* سیکورٹی کوڈ:
  

آخری مندرجات
زیادہ زیر بحث والی
زیادہ مشاہدات والی