2022 May 22
شیعہ اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی شان میں توہین ؟؟ شیعہ مخالفین کی عجز و ناتوانی کا تماشا ۔۔
مندرجات: ٢٢١٥ تاریخ اشاعت: ٠٥ February ٢٠٢٢ - ١٥:٢٤ مشاہدات: 497
وھابی فتنہ » پبلک
شیعہ اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی شان میں توہین ؟؟ شیعہ مخالفین کی عجز و ناتوانی کا تماشا ۔۔

 شیعہ مخالفین  کی بذدلی ، عجز و ناتوانی اور جہالت  کا تماشا ۔۔

تہمت اور الزام تراشی ،چھوٹی نسبتوں پر گزارا ۔۔

نمونہ :

۱:   کہتے ہیں نعوذ باللہ شیعہ عالم نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی شان میں توہین کی ہے اور یہ کہا ہے کہ  ان کے فرج کوجہنم کی آگ میں ڈالا داخل کرئے گا ۔۔ کیونکہ مشرکہ عورتوں  میں دخول کیا ہے ۔۔۔۔۔

اسکین دیکھیں ۔۔۔۔

۔۔۔۔۔

اسکین دیکھیں ۔۔۔۔

لله ثم للتاریخ کشف الاسرار و تبرئه الائمه الاطهار تالیف  موسوی، حسین

 

شیعہ جواب دیتے ہیں.

چند اہم نکات :

مذکورہ کتاب کا مصنف شیعہ نہیں ہے یہ ایک اسم مستعار ہے، شیعہ نام ظاہر کر کے شیعوں کے خلاف لکھی گٗئی کتاب ہے اس نام کا کوئی شیعہ عالم موجود نہیں ہے ۔۔۔۔

یہ بھی قابل توجہ ہے کہ مذکورہ کتاب سعودی عرب میں چھاپی ہے اور کثیر تعداد میں حجاج میں تقسیم کی گئی ہے ۔۔۔۔۔

 

لہذا یہ جھوٹے لوگوں کی جھوٹی کہانیاں ہیں ۔۔۔۔۔

شیعوں کی طرف سے ردیہ ۔

 

جیساکہ سعودی عرب کا مشہور شیعہ محقق جناب آل محسن ،علی نے اس کتاب کا رد ’’لله و للحقيقه رد علي كتاب الله ثم للتاريخ‘‘ کے نام سے تحریر کر کے ٹھوس دلائل سے یہ ثابت کیا ہے کہ اس نام کا کوئی شخص حوزہ علمیہ نجف میں نہیں تھا ۔۔۔۔

جناب آل محسن ،علی نے مذکورہ کتاب میں مذکورہ الزام کے جواب میں لکھا ہے ۔۔۔ اس جعلی مصنف کو یہ بھی پتہ نہیں کہ غروی شیخ ہے یا سید ۔۔۔  میں خود ہی ان کے درسوں میں جاتا رہا ہوں کبھی انہوں نے اس قسم کی باطل باتیں اور ہزیان گوئی  نہیں کی ہے  ۔۔۔۔

اگر ایسی باتیں کرتے تو یہ بات مشہور ہوجاتی اور کیونکہ یہ بات شان رسول اللہ(ص) کےخلاف ہے اور تمام مسلمانوں کے عقیدے کے خلاف ہے لہذا اس کے خلاف کوئی نہ کوئی آواز اٹھاتے ۔۔

۔۔۔۔۔۔

قال الکاتب: قال السید کذا علی غروی أحد أکبر العلماء فی الحوزه: (إن النبی صلی الله علیه وآله لا بد أن یدخل فَرْجُه النار، لأنه وَطِئَ بعضَ المشرکات) یرید بذلک زواجه من عائشه وحفصه، وهذا کما هو معلوم فیه إساءه إلی النبی صلی الله علیه وآله، لأنه لو کان فَرْجُ رسولِ الله یدخل النار فلن یدخل الجنه أحدٌ أبداً.

وأقول: إن المیرزا علی الغروی قدَّس الله نفسه الزکیه لا یصدر منه هذا الهذیان.

وإذا کان الکاتب لا یدری أن المیرزا علی الغروی شیخ أو سیّد فکیف یوثق فی نقله ویؤخذ بشهادته؟

ونحن تشرفنا بالحضور مدّه فی درسه الشریف، وکان یخصّنا بأمور کثیره، ولم نسمع منه أمثال هذه الأباطیل المفضوحه التی لا یتفوَّه بها جاهل فضلًا عن عالم

ص: 113

فاضل، ولو قالها لاشتهرت عنه حال حیاته، لما فیها من الجرأه العظیمه علی مقام النبی الأعظم صلی الله علیه وآله وسلم، ولما فیها من المخالفات الواضحه لإجماعات المسلمین کافه، إذ کیف یتحقق دخول الفرج وحده فی النار من دون سائر الجسد؟

وکیف یعاقَب خصوص الفرج مع أن الملامسه فی النکاح تحصل بالبدن کله؟!

وکیف تستوجب ملامسه الکافره دخول العضو الملامس لها فی النار مع جواز وطء الکتابیات بنکاح أو ملک یمین؟

مضافاً إلی أن لازم العقاب بإدخال الفرج فی النار- لو تعقَّلناه- هو تحقق الذنب العظیم من النبی صلی الله علیه وآله وسلم المنافی لعصمته المسلَّمه بین المسلمین.

۔۔  ’’لله و للحقيقه رد علي كتاب الله ثم للتاريخ‘‘ ص ۔ ۱۱۲۔۔۔۔ ۱۱۳

 لله و للحقیقه رد علی کتاب الله ثم للتاریخ/ تالیف علی آل محسن

مشخصات نشر : تهران: مشعر، 1382.

 

مذکورہ کتاب کی رد میں کئ شیعہ علما نے قلم اٹھایا ہے اور مذکورہ شیخ محسن کے علاوہ دوسروں نے بھی  اس کتاب کا دندان شکن جواب دیا ہے ۔

جیساکہ علامہ عسکری نے بھی ایک کتاب





Share
* نام:
* ایمیل:
* رائے کا متن :
* سیکورٹی کوڈ:
  

آخری مندرجات
زیادہ زیر بحث والی
زیادہ مشاہدات والی